47

نوجوانوں کا خاتون پر وحشیانہ تشدد، کپڑے پھاڑ دیئے، سڑک پر گھسیٹتے رہے

شہر کے بارونق علاقہ شمع چوک میں تھانہ میں میں درخواست دینے کی پاداش پر چار نوجوانوں نے شادی شدہ خاتون کو سرے بازار تشدد کا نشانہ بناتے ہوئے اس کے کپڑے پھاڑ کر برہنہ کر دیا اس دوران خاتون ملزمان کو اللہ اور رسولﷺ کے واسطے دیتی رہی لیکن وہ تھپڑوں اور گھونسوں سے تشدد کرتے رہے اور بالوں سے پکڑ کر سڑک پر گھسیٹتے رہے .اس دوران راہگیروں نے خاتون کی آہ و بکا سن کر اسے ملزمان کے چنگل سے آزاد کروایا اور چادریں ڈال کر اس کے جسم کو ڈھانپ دیا جس کے بعد ملزمان وہاں سے للکارتے ہوئے فرار ہو گئے واقعہ کی اطلاع ملتے ہی پولیس موقع پر پہنچ گئی.

روزنامہ خبریں کے مطابق خاتون بسمہ بی بی زوجہ خلیل احمد نے ملزمان سے 40 ہزار روپے لینے تھے جس کیلئے تھانہ بی ڈویژن میں8 روز قبل درخواست بھی دے رکھی تھی مگر اس پر پولیس نے کوئی کارروائی نہ کی ملزمان کو اس بات کا رنج ہوا کہ ان کیخلاف تھانہ میں درخواست کیوں دی گئی ہے

اور اسی بات پر جب خاتون گزشتہ روز سوداسلف خریدنے بازار آرہی تھی کہ راستہ میں ملزمان محمد شاہد ، علی، پپو وغیرہ نے ساتھی خاتون رانی بی بی کی مدد سے اس کو گھیر لیا اور اس کو تشدد کا نشانہ بنانا شروع کر دیا مزاحمت کرنے پر ملزمان نے اس کے کپڑے پھاڑ ڈالے جس سے وہ برہنہ ہو گئی اس کے باوجود ملزمان خاتون کو تشدد کا نشانہ بناتے رہے تاہم راہگیروں نے مداخلت کر کے ملزمان سے آزاد کروایا۔ ملزمان کا خاتون کے ساتھ لین دین کا تنازعہ چلا آرہا ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں