48

کیا آدمی ہے یا ر یہ۔۔کتنے پتلے کان ہیں اس کے اور ۔۔۔ ٹیسٹ میچ کے دوران ٹنڈولکر نے سنجے منجریکر کو عمران خان کے بارے میں کیا کہا تھا؟ بھارتی کمنٹیٹر کا برسوں بعد انکشاف

بھارت کے مشہور زمانہ مڈل آرڈر بلے باز اور موجود دور کے کمنٹیٹر سنجے منجریکرنے پاکستان کے خلاف کھیلے گئے ٹیسٹ میچ کے دورا ن عمران خان کی زندگی کا ایک اور واقعہ بیان کر ڈالا۔ اپنی آپ بیتی میں سنجے منجریکر جو عمران خان کو اپنا دیوتا قرار دیتے ہیں ۔ کہتے ہیں کہ عمران خان کا گیم پر فوکس اور ان کی دیکھنے اور سننے کی صلاحیت کمال حد تک تیز تھی۔ سنجے منجریکر نے 1989کے فیصل آباد میں کھیلے گئے ایک پاک بھارت ٹیسٹ کا میچ کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ میچ کے دوران میں نان سڑائیکر اینڈ پر تھا اور نوجوان کرکٹر سچن ٹنڈولکر سٹرائیک پر تھا۔

لیگ سٹمپ پر پڑی ایک بال کو ٹنڈولکر نے اپنے کولہے کے پاس سے گلائیڈ کرنے کی کوشش کی تو اس کے بلے کاایک بہت ہی مدہم اور بے حد باریک ایج لگاجسے بائولر، وکٹ کیپر اور امپائر میں سے کسی نے بھی نہیں سنا۔صرف مڈ آن پر کھڑے ہوئے عمران خان نے اس ایج کو سن لیا تھا اور وہ بھی پتہ نہیں کیسے۔ انھوںنے امپائر سے اپیل کی۔لیکن امپائر نے نفی میں سر ہلا دیا۔ اس پر عمران خان اپنے فیلڈرز پر بگڑنا شروع ہوگئے کہ وہ اس ایج کوکیوں سن نہیں سکے اور اپیل کیوں نہیں کی گئی۔ اوور ختم ہوا ۔ میں اور ٹنڈولکر پچ پر اکٹھے ہوئے۔ ٹنڈولکر کو تو معلوم تھا کہ اس نے بال کو ایج کیا تھا تو اس نے مجھے کہا، کیا آدمی ہے یار یہ، کتنے پتلے کان ہیں اس کے(یعنی کتنی باریک آواز بھی سن لیتا ہے)، اور کھیل پر فوکس بھی۔ سنجے منجریکر کہتے ہیں کہ اس میں کوئی شک نہیں کہ عمران خان جتنا گیم پر فوکس کسی بھی پاکستانی کھلاڑی کا نہیں تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں